ہزارہ کمیونٹی منتظر، وزیر اعظم ترک ڈراما ٹیم سے ملاقات میں مصروف

0
149

اسلام آباد(اردو اپ ڈیٹس) ہزارہ میں 11 لاشیں وزیر اعظم کا انتظار کرتی رہیں اور وزیر اعظم ترک ڈراما سیریل’’ارتغرل‘‘ بنانے والی ٹیم کو داد دینے میں مصروف رہے. ذرائع کے مطابق کچھ دیر قبل حکومت نے پاکستان اور ترکی کے تعاون سے تحریکِ خلافت میں برصغیر کے مشہور کردار ترک لالہ پر ڈرامہ سیریل بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔اس حوالے سے وزیرِ اعظم عمران خان سے ترک ڈرامہ سیریل ارتغرل بنانے والی ٹیم نے کمال تیکدین کی سربراہی میں ملاقات کی۔ ملاقات میں وزیرِ اطلاعات و نشریات سینیٹر شبلی فراز، چیئرمین کشمیر کمیٹی شہریار آفریدی، ترکی اور پاکستانی فلم انڈسٹری سے تعلق رکھنے والی شخصیات موجود تھیں۔ملاقات میں ترکی اور پاکستان کے تعاون سے تحریکِ خلافت کے برصغیر سے تعلق رکھنے والے مشہور کردار ترک لالہ پر مجوزہ ٹیلی ویژن سیریز پر تفصیلی گفتگو ہوگئی۔چیئرمین کشمیر کمیٹی شہریار آفریدی نے اجلاس کو ترک لالہ کے تحریک خلافت کے لیے اہم کردار اور ترکی میں ان کی اہمیت کے بارے آگاہ کیا ساتھ ہی پاکستانی نوجوان نسل کو اپنے تاریخی ہیروز سے آگاہی کی اہمیت پر بھی روشنی ڈالی۔
کمال تیکدین نے وزیرِ اعظم کے پاکستان میں ترک ڈراموں کو نشر کرنے کے اقدام کو قابلِ ستائش قرار دیتے ہوئے کہا کہ وزیرِ اعظم عمران خان اور ترک صدر رجب طیب اردگان کا ویژن ایک ہے کہ کسی بھی ملک کی ترقی کے لیے اس کی نوجوان نسل کو اپنی تاریخ اور اپنی ثقافت سے آگاہی نہایت ضروری ہے۔وزیرِ اعظم عمران خان نے اس موقع پر کہا کہ پاکستانی ڈرامے 80 کی دہائی تک پوری دنیا میں اپنی پہچان آپ تھے، پاکستانی فلم اور ڈرامہ انڈسٹری کو مقامی ثقافت کے فروغ کے لیے کام کرنے کی ضرورت ہے تاکہ مغرب سے مرعوب نوجوان نسل کو اپنی اصل ثقافت سے آگاہی دی جا سکے اور ایسی معاشرتی برائیوں سے بچایا جاسکے جس سے ہمسایہ ممالک کی نئی نسل مغربی مواد نشر ہونے کی وجہ سے دوچار ہے۔ دوسری جانب ہزارہ کمیونٹی کے افراد کوئٹہ میں 11 لاشوں کے ساتھ سخت سردی میں وزیر اعظم کے منتظر ہیں مگر وزیر اعظم عمران خان جو اقتدار میں آنے سے قبل ایسے واقعات پر حکمرانوں کو تنقید کا نشانہ بناتے رہے ہیں‌کوئٹہ نہیں پہنچ سکے. کل بھی وہ لاہور کا دورہ کریں گے مگر کوئٹہ ان کی مصروفیات میں ’’ہنوز دلی دور است‘‘ کی طرح دکھائی نہیں دیتا. وزیر اعظم نے ہزارہ کمیونٹی سے لاشوں کی تدفین کی درخواست کی تھی اور وعدہ کیا تھا کہ وہ تدفین کے بعد تعزیت کے لیے ہزارہ کمیونٹی کے پاس جائیں گے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here