پاک آسٹریلیا ٹیسٹ، بابر اعظم کی سنچری، آسٹریلیا فتح سے 4 وکٹ دور

0
388

برسبین(ایس این این )برسبین ٹیسٹ میں چوتھے روز پاکستان کی دوسری اننگز کی بیٹنگ جاری ہے۔ پہلی اننگز میں 580 کے سکور کی بدولت آسٹریلیا کو پاکستان پر برتری حاصل ہے۔آج ہفتے کو پاکستان نے چھ وکٹوں کے نقصان پر 255 رنز بنائے ہیں۔ اس وقت کریز پر محمد رضوان موجود ہیں جو نصف سنچری مکمل کر چکے ہیں۔مچل سٹارک اور پیٹ کمنز نے دو، دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا ہے۔
آسٹریلوی بولرز کے خلاف بابر اعظم نے مزاحمت جاری رکھتے ہوئے اپنے ٹیسٹ کریئر کی دوسری سنچری بنائی لیکن پھر نیتھ لائن کی ایک گھومتی گیند پر وکٹ کیپر کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہوگئے۔ محمد رضوان کے ساتھ مل کر انھوں نے چھٹی وکٹ کے لیے 132 رنز کی شراکت داری قائم کی تھی۔
بابر اعظم نے آسٹریلوی بولرز کا جم کر مقابلہ کیا اور 104 رنز بنائے.پہلے سیشن کے آغاز میں ہی پاکستان کو دو وکٹوں کا نقصان اٹھانا پڑا تھا۔پاکستان نے چوتھے دن کا آغاز محتاط بیٹنگ کے ساتھ کیا لیکن آسٹریلوی بولرز اچھی لائن اور لینتھ کے ساتھ بولنگ کرواتے ہوئے پاکستانی بلے بازوں پر حاوی دکھائی دیے۔
پاکستان کے پانچویں آؤٹ ہونے والے کھلاڑی افتخار احمد تھے جو بنا کوئی رن بنائے جوش ہیزل وڈ کی گیند پر وکٹ کیپر کے ہاتھوں کیچ آؤٹ ہو گئے۔ انھوں نے صرف چار گیندوں کا سامنا کیا تھا۔اس سے قبل شان مسعود آؤٹ ہونے والے چوتھے کھلاڑی تھے۔ انھوں نے 42 رنز بنائے اور آسٹریلوی بولر پیٹ کمنز کا شکار ہوئے۔واضح رہے کہ پہلی اننگز میں پاکستان کے 240 کے سکور کے جواب میں آسٹریلیا نے 340 رنز کی برتری حاصل کی تھی۔
دوسری اننگز میں بھی آسٹریلوی بولرز مچل سٹارک اور پیٹ کمنز کی تیز بولنگ کے سامنے پاکستانی بلے باز مشکل میں نظر آئے۔پاکستان کی جانب سے بیٹگ کا آغاز شان مسعود اور کپتان اظہر علی نے کیا، اظہر علی اننگز کے تیسرے ہی اوور میں مچل اسٹارک کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہوئے لیکن انھوں نے ریویو لیا جو غلط ثابت ہوا، وہ 5 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔ انھیں مچل سٹارک نے آؤٹ کیا۔آؤٹ آف فام حارث سہیل ایک بار پھر ناکام ثابت ہوئے اور صرف 8 رنز بنا کر سٹارک کی گیند پر وکٹوں کے پیچھے کیچ آؤٹ ہو گئے۔جبکہ پہلی اننگز میں 76 رنز بنانے والے اسد شفیق اس مرتبہ بغیر کوئی رن بنائے پویلین لوٹ گئے تھے۔ پیٹ کمنز کی گیند پر سمتھ نے ان کا کیچ پکڑا۔تیسرے دن کے دوران آسٹریلوی بلے باز مارنس لابوشین نے اپنے کریئر کی پہلی سنچری مکمل کی اور پھر 185 رنز بنا کر شاہین آفریدی کے ہاتھوں آؤٹ ہوئے۔میتھیو ویڈ نے نصف سنچری بنائی اور پھر 60 رنز پر آؤٹ ہوئے۔آسٹریلوی بلے مارنس لابوشین نے 185 رنز کی باری کھیلی.یاسر شاہ نے چار جبکہ حارث سہیل اور شاہین آفریدی نے دو، دو وکٹیں حاصل کیں ہیں۔
ڈیوڈ وارنر اپنے گذشتہ روز کے سکور 151 میں صرف تین رنز کا اضافہ کر کے نسیم شاہ کی گیند پر آؤٹ ہوگئے ہیں۔ جبکہ سٹیون سمتھ چار کے سکور پر یاسر شاہ کی گیند پر بولڈ ہوگئے ہیں۔دوسرے دن کے اختتام پر آسٹریلیا نے پاکستان کی پہلی اننگز کے سکور 240 کے جواب میں ایک وکٹ کے نقصان پر 312 رنز بنا لیے تھے۔جمعے کے روز آسٹریلیا کی جانب سے جو برنز اور ڈیوڈ وارنر نے اننگز کا آغاز کیا اور دونوں نے انتہائی پراعتماد بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے پہلی وکٹ کی شراکت میں 222 رنز بنائے۔ڈیوڈ وارنر 154 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے
دوسرے سیشن کے آغاز میں ہی ڈیوڈ وارنر کو 16 برس کے نسیم شاہ نے 56 رنز پر آؤٹ تو کر دیا، لیکن تھرڈ امپائر سے مشورہ کرنے کے بعد اسے نو بال قرار دیا گیا اور نسیم ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی پہلی وکٹ سے محروم رہے۔ڈیوڈ وارنر نے اس چانس کا فائدہ اٹھاتے ہوئے اپنے کریئر کی 22ویں سنچری مکمل کی۔ ان کے ساتھی اوپنر جو برنز نے 97 رنز کی عمدہ اننگز کھیلی تاہم وہ یاسر شاہ کی گیند پر بولڈ ہو گئے۔تاہم ان کے جانے کے بعد پاکستانی بولرز مزید آسٹریلوی بلے بازوں کو آؤٹ کرنے میں ناکام رہے۔ دوسری نئی گیند لینے کے بعد عمران کی گیند ڈیوڈ وارنر کی وکٹوں سے تو ٹکرائی لیکن بیلز نہ گریں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here